تصویر

شہنشاہ غزل مہدی حسن کو اپنے پرستاروں سے بچھڑے ایک سال ہوگیا۔اس مدھر آواز کے سدابہار عروج پر دیکھتے ہیں ۔بھارتی راجھستان کے گاوٴں لونا میں آنکھ کھولنے والا یہ عظیم گلوکار کلاوت گھرانے کا چشم و چراغ تھا۔لڑکپن میں ہی عملی زندگی موٹر مکینک کے طور پر شروع کی،گائیکی کے سفر کا آغاز ریڈیو پاکستان سے کیا۔مہدی حسن 60اور 70 کی دہائی میں فلمی صنعت کے مصروف ترین گلوکار بن گئے۔کلاسیکی گائیکی میں اپنا لوہا منوا کر یہ فنکار جب غزل کے میدان میں اترا تو شہنشاہ غزل کا تاج سر پر سجا لیا۔فن گائیکی میں مہدی حسن کے عظیم مقام کے اعتراف میں انہیں ملک ہی نہیں بیرون ملک میں بھی سربراہان مملکت بھی تھے۔پاکستان میں گائیکی کے ماتھے کا جھومر مہدی حسن خود تو اس دنیا سے چلے گئے لیکن اپنے پیچھے ایسا فن چھوڑ گئے جو مدتوں ان کے نام اور کام کی عظمت کو مانند نہیں پڑنے دے گا۔