تصویر

کراچی کے مختلف علاقوں میں رات گئے فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں پولیس اہلکار سمیت چار افراد لقمہ اجل بن گئے ۔۔ بوٹ بیسن میں ایف آئی اے نے غیرقانونی ٹیلی فون ایکسچینج پر چھاپہ مارکر ایک شخص کو حراست میں لے لیا ۔

کراچی میں قتل وغارت گری کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ۔۔۔۔ گلبہار لیاقت چوک کے قریب گھات لگائے موٹرسائیکل سوار دو ملزمان نے ڈی آئی جی کرائم برانچ میں تعینات پولیس اہلکار پر فائرنگ کرکے اسے قتل کردیا ۔۔ محمد آصف ڈیوٹی کرکے گھرجارہا تھا ۔۔۔ علی الصبح ناظم آباد گول مارکیٹ کے قریب بھی گولیاں چلیں اور پچاس سالہ عرفان اللہ جان سے گیا ۔۔ لیاری کی بہارکالونی اور آگرہ تاج سے دو افراد کی تشدد زدہ لاشیں ملیں ۔۔ جنہیں فائرنگ کرکے قتل کیا گیا

 دوسری جانب ڈیفنس میں ہونے والا دھماکا پولیس کےلیے درد سر بنارہا ۔۔  پہلے تو پولیس دھماکے سے ہی انکار کرتی رہی تاہم بعد میں خیابان غازی میں ایک بنگلے پرکریکر حملہ کی تصدیق کردی گئی ۔  دھماکے کی جگہ ڈیڑھ فٹ لمبا اور دو انچ گہرا گڑھا پڑگیا۔۔۔ 

رات گئے ایف آئی اے کی ٹیم نے بوٹ بیسن کی ایک عمارت میں قائم غیرقانونی ٹیلی فون ایکسچنج پر چھاپہ مارا ۔۔۔۔ آپریشن کے دوران موبائل فون کی سمز ۔۔۔ ڈیوائسز اور دیگر سامان قبضے میں لیکر ایک شخص کو حراست میں لے لیا گیا