تصویر ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم دہشت گردی کی راہ میں رکاوٹ ہے مگر اسے دیوار سے لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ لندن پولیس کے ذریعے میڈیا ٹرائل کیا جا رہا ہے۔ ایم کیو ایم برطانوی ڈپٹی ہائی کمیشن کے پاس پٹیشن جمع کرائے گی۔ عدالتوں کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے اور برطانوی وزیراعظم کی رہائش گاہ پر مظاہرہ بھی کیا جائے گا۔

ایم کیو ایم کے رہنما اور کارکنان اپنے قائد الطاف حسین کی پارٹی قیادت سے دستبرداری قبول کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ نائن زیرو پر موجود بڑی تعداد میں رہنما اور کارکنان الطاف حسین سے پارٹی قیادت سے سبکدوشی کا فیصلہ واپس لینے کی اپیل کر رہے ہیں۔ ایم کیو ایم کے ڈپٹی کنوینر ڈاکٹر فاروق ستار نے سماء سے گفت گو کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر کے مظلوم عوام الطاف حسین کی قیادت میں ہی منزل پر پہنچیں گے۔ ایم کیو ایم دہشت گردوں کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ شاید یہی وجہ ہے کہ اسے دیوار سے لگایا جا رہا ہے۔

ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر عمران فاروق کا قتل بڑا سانحہ ہے۔ ان کے قاتلوں کو گرفتار کیا جانا چاہئے، لیکن ہو یہ رہا ہے کہ عمران فاروق قتل کیس کی تفتیش کے بجائے ایم کیو ایم پر دباو بڑھایا جا رہا ہے۔ ایم کیو ایم اس معاملے میں برطانوی عدالتوں سے رجوع کرے گی اور برطانوی وزیراعظم کی رہائش گاہ کے باہر مظاہرہ بھی کیا جائے گا۔
 
ڈاکٹر فاروق ستار کا کہنا تھا کہ لندن کی میٹرو پولیٹن پولیس کے ذریعے ایم کیو ایم کا میڈیا ٹرائل کیا جارہا ہے۔