اسرائیل کا غزہ سے تمام فوجی واپس بلانے کا اعلان،علاقے میں72 گھنٹے کی جنگ بندیاسرائیل نے غزہ میں 28 روز تک غزہ میں خون کی ہولی کھیلنے کے بعد مقبوضہ علاقے سے اپنے تمام فوجیوں کو واپس بلانے کا اعلان کردیا ہے۔
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ صیہونی فوج نےغزہ میں واقع تمام بارودی سرنگوں کو ختم کرنے کا آپریشن مکمل کرلیا جس کے بعد اب غزہ سے اسرائیلی فوجیں واپس نکل جائیں گی۔
دوسری جانب مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں مصری حکومت کے اعلیٰ ترین حکام اور حماس کے رہنماؤں کے درمیان طویل مذاکرات ہوئے تاہم ان میں اسرائیل نے شرکت نہیں کی، مذاکرات کے دوران حماس نے مصر کی جانب سے علاقے میں 72 گھنٹے کی غیر مشروط جنگ بندی کی پیشکش کی جسے حماس نے قبول کرلیا۔ غیر مشروط جنگ بندی کا اطلاق پاکستان کے معیاری وقت کے مطابق صبح 10 بجے سے ہوا ہے جو کہ ہفتے کی صبح 10 بجے تک برقرار رہے گی۔
تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ گو کہ گزشتہ 28 روز میں اپنی طاقت کے نشے میں چور اسرائیلی حکومت نے کئی مرتبہ ہونے والی جنگ بندیاں یک طرفہ طور پر توڑی ہیں تاہم اس بات کا قوی امکان ہے کہ اسرائیل اپنے فوجیوں کو بحفاظت نکالنے کے لئے اس مرتبہ جنگ بندی پر عملدرآمد کرے گا۔
واضح رہے کہ 8 جولائی سے اسرائیلی فوج کی غزہ میں بربریت سے ایک ہزار 834 فلسطینی شہید جبکہ ہزاروں زخمی ہوئے ہیں تاہم اس دوران اسرائیل کو بھی 64 فوجیوں سمیت 67 شہریوں کی ہلاکت برداشت کرنی پڑی ہے جو کہ گزشتہ 10 برسوں ک دوران ہونے والی جارحیت میں صیہونی حکومت کا سب سے بڑا جانی نقصان ہے۔