غزہ صورتحال، سراج الحق کی آرمی چیف سے سخت نوٹس لینے کی اپیلجماعت اسلامی کے امیر سراج الحق کا کہنا ہے کہ بیت المقدس پر صہیونی قبضہ قبول نہیں، قبلہ اول کی آزادی کیلئے ہم فلسطینی عوام کے ساتھ ہیں۔ غزہ کے بھائیوں کیلئے 5 کروڑ روپے امداد بھیجنے کا اہتمام کیا ہے۔
کراچی میں جماعت اسلامی کے زیر اہتمام غزہ ملین مارچ سے خطاب میں سراج الحق کا کہنا تھا کہ آج غزہ کے مسلمان شہید ہو رہے ہیں لیکن عالم اسلام پر قبرستان کی طرح خاموشی تیار ہے اور اہل غزہ پر کوئی رونے کو تیار نہیں ہے۔ اسلامی ممالک کے پاس 70 لاکھ سے زائد فوج ہے لیکن اس کے باوجود اسرائیل کی غزہ پر جارحیت جاری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارا خون کا آخری قطرہ بھی قبلہ اول کی آزادی کیلئے حاضر ہے۔ ہمیں بیت المقدس پر صہیونی قبضہ قبول نہیں ہے۔ قبلہ اول کی آزادی کیلئے ہم فلسطینی عوام کے ساتھ ہیں۔ دنیا میں جہاں بھی کہیں مسلمان محکوم اور مظلوم ہیں ہمیں ان کی آزادی کیلئے مل کر کام کرنا ہے۔ اگر مسلمانوں نے غیرت کا راستہ لیا تو اللہ کی مدد اور نصرت آج بھی ان کے ساتھ ہیں۔ سراج الحق کا کہنا تھا کہ پاکستان چند پہاڑی سلسلوں کا نام نہیں بلکہ ایک فلسفے کا نام ہے۔ میں پاک فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف سے اپیل کرتا ہوں کہ آپ نے اس نظریے کی حفاظت کیلئے کام کرنا ہے۔ اسلام آباد میں جاری سیاسی صورتحال کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ میرا دل پریشان ہے کیونکہ اسلام آباد میں سیاسی جماعتوں نے ایک دوسرے کیخلاف مورچے بنا لئے ہیں۔ نہیں چاہتا کہ آپس کی لڑائی کی وجہ سے مارشل لا لگ جائے۔ تمام مسائل کا حل آئین کے اندر ہی موجود ہے۔ ایسا نظام بنانا ہو گا جس میں کسی کا استحصال نہ ہو۔