کراچی میں ٹرام چلانے کا فیصلہ،

کراچی میں ٹرام چلانے کا فیصلہ،صدر میں ٹرام وے چلائی جائیں گی، ٹرام وے منصوبہ 2 سال میں مکمل ہوگا جس کی تیاری کے لئے مشیر کا تقرر کردیا گیا ہے۔ درمیانی مدت میں شٹل بس سروس شروع کی جائے گی،منصوبے کی نگرانی کیلیے ویجلنس کمیٹی قائم کردی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق کمشنر کراچی ، بلدیہ عظمیٰ، اور ٹریفک پولیس کی مشترکہ منصوبہ بندی سے 4 ماہ قبل صدر کو تجاوزات سے پاک کرکے پبلک ٹرانسپورٹ کی ری روٹنگ کی گئی تھی تاہم منصوبہ ناکام ہورہا ہے صدر بھر میں 2 ہفتے کے دوران تجاوزات دوبارہ قائم ہوگئیں اور پبلک ٹرانسپورٹ نے نئے روٹس کی خلاف ورزی شروع کردی۔
کمشنر نے ایمپریس مارکیٹ کے احیا کیلیے دوبارہ اس منصوبے پر عمل کی ہدایت کی ہے اس ضمن میں ویجلنس کمیٹی بنائی گئی ہے ، کمیٹی میں ایس ایس سائوتھ، ایس ایس پی ٹریفک، سیکریٹری آرٹی اے، ڈائریکٹر انسداد تجاوزات، نمائندہ کنٹونمنٹ بورڈ شامل ہیں،کمیٹی نے پہلے مرحلے میں صدر میں پبلک ٹرانسپورٹ کی ری روٹنگ منصوبے پر عمل کراکر تجاوزات کے خاتمے کیلیے کارروائی شروع کی ہے، کمیٹی پبلک ٹرانسپورٹ کی جانب سے ری روٹنگ کی خلاف ورزی اور تجاوزات کا قیام روکے گی۔
منصوبے کے دوسرے مرحلے میں ایمپریس مارکیٹ کے اطراف سڑکوں میں پیدل چلنے والوں کیلیے زونز بنائے جائیں گے، مینزفیلڈ اسٹریٹ، پریڈی اسٹریٹ، مبارک شہید روڈ، میر کرم علی تالپور روڈ اور دیگر سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت ممنوع ہوگی، گاڑیوں کی پارکنگ کیلیے صدر پارکنگ پلازہ کا استعمال یقینی بنایا جائے گا، منصوبے پر 6 ماہ سے ایک سال میں عملدرآمدکیا جائے گا، پیدل چلنے والوں کی آسانی کے لیے عارضی شٹل بس سروس شروع کی جائیگی، طویل منصوبہ بندی کے تحت ٹرام وے چلائی جائیں گی جس پر 2 سال میں عمل ہوگا۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s