جامعہ کراچی میں انتظامیہ آپے سے باہر، صحافیوں پر تشدد، یرغمال بنا لیا

جامعہ کراچی میں انتظامیہ آپے سے باہر، صحافیوں پر تشدد، یرغمال بنا لیاجامعہ کراچی میں طالبات پر تشدد کے خلاف طلبا و طالبات نے احتجاج کیا تو کوریج سے روکنے کے لئے جامعہ کے سیکورٹی افسر نے میڈیا پر تشدد کے بعد صحافیوں کو چار گھنٹے تک یرغمال بنائے رکھا۔ وائس چانسلر نے تحقیقات کے لئے تین رکنی کمیٹی بنا دی۔
جامعہ کراچی میں گزشتہ روز طالبات پر ہونے والے تشدد کے خلاف جامعہ کی طالبات اور طلبہ نے احتجاج کیا اور جامعہ کے ایڈمین بلاک کے باہر جمع ہو کر نعرے بازی کی۔ جامعہ کے سیکورٹی انچارج محمد زبیر نے میڈیا کوریج سے روک دیا اور کہا کہ جامعہ میں میڈیا کے داخلے پر پابندی ہے۔ میڈیا نے کیمرے کے بغیر جامعہ میں داخلہ ہو کر کوریج کی کوشش کی تو انتظامیہ نے ان کے ساتھ تشدد کیا اور ایک نجی چینل کے صحافی کو تھپڑ مارے اور کپڑے پھاڑ دئیے۔

وائس چانسلر نے صحافیوں پر تشدد کے واقعہ کی تحقیقات کے لئے تین رکنی کمیٹی بنا دی۔ کمیٹی تین دن میں رپورٹ پیش کرے گی۔ وائس چانسلر کے احکامات کے باوجود سیکورٹی انچارج محمد زبیر اور انکے ساتھیوں نے میڈیا کو باہر جانے سے روکنے کے لئے جامعہ کے تمام گیٹس بند کر کے میڈیا کو یرغمال بنا لیا۔ صحافیوں کو چار گھنٹے تک یرغمال بنا کر رکھا گیا۔ جس کے بعد رجسٹرار معظم علی خان سمیت چند اساتذہ نے صحافیوں کو اپنی نگرانی میں گیٹ تک باہر نکالا۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s