چار دنوں کے پیار کے بعد لمبی جدائی دینے والی بلبل صحرا ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے دو برس بیت گئے

چار دنوں کے پیار کے بعد لمبی جدائی دینے والی بلبل صحرا ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے دو برس بیت گئےچار دنوں کے پیار کے بعد لمبی جدائی دینے والی بلبل صحرا ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے دو برس بیت گئے۔

تفصیلات کے مطابق بلبل صحرا ریشماں کو ہم سے بچھڑے دو برس بیت گئے۔ ماضی کی کوئل طویل عرصے تک گلے کے سرطان میں مبتلا رہیں اور تین نومبر کو خالق حقیقی سے جاملی تھیں۔ قیام پاکستان کے سال خانہ بدوشوں کے خاندان میں پیدا ہونے والی ریشماں کے والدین پاکستان منتقل ہوئے۔

غریب خاندان سے تعلق رکھنے والی ریشماں نے موسیقی کی باقاعدہ تعلیم لی نہ کچھ پڑھ لکھ سکیں۔ صوفیائے کرام کے مزاروں پر کافیاں گایا کرتی تھیں۔ شہباز قلندر کے مزار پر ” ہولعل میری“ گایا تو جوہری کی نظر ہیرے پر پڑگئی اور کوئل کی کوک ریڈیو پاکستان سے سنائی دینے لگی۔

ہائے نئیوں لگدا دل میرا، اکھیاں نوں رہن دے اکھیاں دے کول، ماہیا مینوں یاد آﺅندا سمیت درجنوں گیت کروڑوں لوگوں کے دل کی دھڑکن بنے رہے۔ ریشماں کے کئی گیت بھارتی فلموں میں بھی شامل کئے گئے۔

حکومت نے کینسر کے علاج کے لئے مالی امداد دی۔ عظیم گلوکارہ کو خدمات کے اعتراف میں ستارہ امتیاز دیا گیا۔ تین نومبر دوہزار تیرہ کو کوئل کی کوک خاموش ہوگئی مگر ان کے گائے ہوئے گیت آج بھی کانوں میں رس گھول رہے ہیں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s