لاہور،زمین بوس ہونیوالی فیکٹری میں کمسن بچوں سےکام لینےکاانکشاف

لاہور،زمین بوس ہونیوالی فیکٹری میں کمسن بچوں سےکام لینےکاانکشافسندر انڈسٹریل اسٹیٹ میں زمین بوس ہونے والی فیکٹری میں کم سن بچوں سے محنت مشقت کرانے کا انکشاف ہوا ہے، حادثے میں زخمی ہونے والوں میں بچوں کی بھی بڑی تعداد شامل ہے۔

ہیں تلخ بہت بندہ مزدور کے اوقات۔۔۔

گھروں اور اپنوں سے دور کم عمر بچے کبھی فکیڑیوں میں تو کبھی صنعتوں میں اپنی عمریں اور بچپنا کہیں بہت دور چھوڑ آتے ہیں، وہ عمر جس میں ننھے ہاتھوں میں قلم اور کتاب اور آنکھوں میں سنہری خواب ہوتے ہیں، پاکستان کے بچوں کی ایک بڑی تعداد گھریلو مسائل اور زمانے کی تلخی کی نذر ہوجاتے ہیں۔

ایک طرف خادم اعلیٰ اپنی ریاست پنجاب میں چائلڈ لیبر کے خاتمے کیلئے کمر بستہ ہیں تو دوسری طرف استحصال کرنے والے بھڑیئیں کام اور مزدوری کی چکی میں پیس پیس کر معصوم بچوں سے ان کی معصومیت اور بچپنا چھین لیتے ہیں۔

ایسی ہی ایک مثال بدھ کے روز لاہور کے علاقے سندر انڈسٹریل اسٹیٹ کے علاقے میں دیکھنے میں آئی، جہاں تین منزلہ عمارت کے زمین بوس ہو جانے کے بعد انکشاف ہوا کہ یہاں کتنی بڑی تعداد میں بچوں سے محنت مزدوری کا کام لیا جاتا تھا۔

عمارت کے زمین بوس ہونے کے بعد کچھ بچے تو ملبے سے نکال لیے گئے، مگر بچ جانے والے بچوں کے مطابق اب بھی بڑی تعداد میں بچے ملبے کے اندر دبے ہوئے ہیں۔ بچوں کی عمریں نو سے پندرہ سال کے درمیان ہیں، جن کا تعلق پنجاب کے مختلف علاقوں سے ہے۔

بچ جانے والے ایک بچے نے سماء سے خصوصی گفت گو میں بتایا کہ اس کا تعلق سردار پورہ سے ہے، اور اس کی عمر بارہ سال ہے، وہ گھر کا خرچہ چلانے اور روٹی پانی کیلئے فیکٹری میں کام کرنے آیا، جب کہ ایک اور زندہ بچ جانے والے بچے نے بتایا کہ اس کا تعلق کوٹ رادھا کشن سے ہے اور اس کی عمر تیرہ سال ہے، وہ کئی مہنیوں سے اس فیکٹری میں ملازم تھا۔

یہ اور اس جیسی کئی داستانیں اس عمارت کے زمین بوس ہونے کے بعد منظر عام پر آئ ہیں، اور نہ جانے کتنی ہی زندگی اور ان سے جڑی کہانیاں اسی ملبے تلے دفن ہو جائیں گئیں، جانے کب اس معاشرے سے چائلڈ لیبر ناسور سے نجات ممکن ہو سکے گی اور جانے کب ان معصوموں کی آنکھوں میں سجے خوابوں کو تعبر مل سکے گی۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s