%da%a9%d8%b1%d8%a7%da%86%db%8c-%d9%85%db%8c%da%ba-%d8%b1%db%8c%d9%86%d8%ac%d8%b1%d8%b2%da%a9%db%92-%d8%a2%d8%b5%d9%81-%d8%b2%d8%b1%d8%af%d8%a7%d8%b1%db%8c-%da%a9%db%92-%d9%82%d8%b1%db%8c%d8%a8%db%8cرینجرز نے آصف زرداری کے قریبی دوست کے دفاتر پر چھاپے مارکر اہم ریکارڈ کی چھان بین کی جب کہ چھاپے کے دوران اسلحہ بھی برآمد ہوا ہے۔
رینجرز نے کراچی کی مصروف ترین شاہراہ آئی آئی چندریگر روڈ پر واقع آصف زرداری کے قریبی دوست انورمجید کے دفتر یر چھاپہ مار کر 2 افراد کو حراست میں لے لیا جبکہ دفتر سے اہم ریکارڈ لیپ ٹاپ بھی قبضے میں لے لیا گیا ہے۔
حراست میں لئے جانے والے 2 افراد کی نشاندہی پر ہی ہاکی اسٹیڈیم کے قریب واقع انورمجید کے ایک اور دفتر پر بھی چھاپہ مارا گیا اورعلاقے کو مکمل طور پر گھیرے میں لے کر تمام آنے اور جانے والے راستوں کو بند کردیا گیا۔ ہاکی اسٹیڈیم کی قریب واقع دفتر کے ایڈمن منیجر کو حراست میں لے کر ریکارڈ بھی قبضے میں لے لیا گیا جب کہ رینجرز نے تیسرا چھاپہ میٹروپول میں واقع انورمجید کے ہی ایک اور دفتر میں مارا جہاں سے ریکارڈ قبضے میں لیا گیا۔
دوسری جانب رینجرز ترجمان کا کہنا ہے کہ رینجرز نے ایک ہی کمپنی کے 2 دفاتر میں غیرقانونی اسلحے کی موجودگی اور شرپسند عناصر کی مالی معاونت کی مصدقہ اطلاعات پر کارروائی کی۔
ترجمان کے مطابق کارروائی کے دوران 5 افراد کو حراست میں بھی لیا گیا جن میں شہزاد شاہد، رجب علی، اجمل خان، کامران، منیر اور کاشف حسین شاہ شامل ہیں، جبکہ کارروائی کے دوران خفیہ خانوں میں چھپایا گیا بھاری تعداد میں اسلحہ اور ایمونیشن بھی برآمد کرلیا گیا ہے۔
ترجمان رینجرز کا کہنا ہے کہ قبضے میں لئے گئے ریکارڈ کی چھان بین کے بعد تخریب کاروں کے سہولت کاروں اور پراپرٹی مالکان کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی کی جائے گی۔