غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارت پولیس نے ایک 14 سالہ لڑکی سے مبینہ زیادتی کے الزام میں شمالی مشرقی ریاست میگھالیا کے پارلیمانی رکن کو گرفتار کر لیا ہے۔ گرفتار کیے جانے والے رکن پارلیمنٹ کا نام جولیئس دورپھنگ ہے۔ ملزم گرفتاری سے بچنے کیلئے چھپا ہوا تھا تاہم پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے اسے گوہاٹی شہر سے حراست میں لے لیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ملزم کی عمر 51 برس ہے اور ایک عسکریت پسند کمانڈر بھی رہ ہے۔ ملزم نے مبینہ طور پر ایک 14 سالہ لڑکی کے ساتھ دو مرتبہ جنسی زیادتی کی، جسے انسانی کی سمگلروں نے اس کے ہاتھ فروخت کیا تھا۔ پولیس کے مطابق جولیئس دورپھنگ نے لڑکی کو ایک گیسٹ ہاؤس میں قید کر رکھا تھا۔