پی ایس ایل 2017 میں شریک عالمی شہرت یافتہ کھلاڑی

پاکستان سپر لیگ کا دوسرے ایڈیشن شائقین کا جوش گرمانے کیلئے شروع ہونے کو ہے اور آج سے دنیا بھر کے مایہ ناز کرکٹ اسٹارز اپنی اپنی ٹیم کی جیت کیلئے سر دھڑ کی بازی لگاتے نظر آئیں گے۔

جہاں گزشتہ ایونٹ میں شریک چند اسٹارز اس ایونٹ میں دستیاب نہیں ہوں گے تو وہیں چند ایسے اسٹارز بھی 2017 کے ایڈیشن میں شریک ہوں گے جو گزشتہ سال پاکستان سپر لیگ میں شرکت نہیں کر سکے تھے۔

برینڈ میک کولم

اس فہرست میں پہلا نام برینڈن میک کولم کا ہے۔ 259 انٹرنیشنل اور ڈومیسٹک ٹی20 میچوں کا وسیع تجربہ رکھنے والے نیوزی لینڈ کے عالمی شہرت یافتہ بلے باز برینڈن میک کولم پاکستان سپر لیگ کے دوسرے ایڈیشن میں سب سے بہترین اضافہ ہے۔

اپنے عمدہ جارح مزاج انداز قیادت سے نیوزی لینڈ کی ٹیم میں نئی روح پھونکنے والے میک کولم دنیا بھر میں شائقین کے فیورٹ ہیں اور کئی مواقعوں پر اپنی ٹیم کو فتح کی راہ پر گامزن کر چکے ہیں۔

نیوزی لینڈ کے سابق کپتان برینڈن میک کولم— فوٹو: اے ایف پی
نیوزی لینڈ کے سابق کپتان برینڈن میک کولم— فوٹو: اے ایف پی

2008 میں آئی پی ایل کے پہلے سیزن کے افتتاحی میچ میں رائل چیلنجر بنگلور کے خلاف 158 رنز کی ناقابل شکست اننگز کی بدولت انہوں نے پہلے ہی میچ سے لیگ کی کامیابی راہ ہموار کی اور اب پاکستانی شائقین کو امید ہے کہ وہ اپنے جارح مزاج بیٹنگ سے انہیں محضوظ کریں گے۔

ٹی ٹوئنٹی میں مجموعی طور پر نو سنچریاں اور 68 نصف سنچریاں بنانے والے میک کولم سے لاہور قلندرز کو بھی کافی امیدیں وابستہ ہیں اور انہیں امید ہے کہ وہ اپنی عمدہ قیادت سے گزشتہ ایونٹ کی ناکام ٹیم کو چیمپیئن کے منصب تک پہنچا دیں گے۔

کیرون پولارڈ

کیرون پولارڈ— فوٹو: اے ایف پی
کیرون پولارڈ— فوٹو: اے ایف پی

کیرون پولارڈ کی وجہ شہرت ان کی شاندار جارحانہ بیٹنگ ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ وہ ایک مستند باؤلر اور عمدہ فیلڈر بھی ہیں۔ 300 سے زائد ٹی20 میچ کھیلنے والے ٹی20 اسپیشلسٹ انجری کے سبب گزشتہ ایونٹ میں پاکستان سپر لیگ میں شرکت نہیں کر سکے تھے لیکن اس سیزن میں کراچی کنگز نے ان کی خدمات حاصل کی ہیں۔

کراچی کنگز کو امید ہے کہ کرس گیل کے ساتھ مل کر پولارڈ کراچی کنگز کو ایونٹ میں وکٹری اسٹینڈ تک رسائی دلا دیں گے۔

آئن مورگن

انگلینڈ کی ٹی20 اور ون ڈے ٹیم کے کپتان آئن مورگن— فوٹو: اے ایف پی
انگلینڈ کی ٹی20 اور ون ڈے ٹیم کے کپتان آئن مورگن— فوٹو: اے ایف پی

انگلینڈ کی ٹی20 اور ون ڈے ٹیم کے کپتان آئن مورگن کا شمار بھی محدود اوورز کی کرکٹ کے بہترین بلے بازوں میں کیا جاتا ہے۔ گزشتہ ایونٹ میں چند وجوہات کے سبب وہ ایونٹ میں شرکت نہیں کر سکے لیکن 200 سے زائد ٹی20 میچ کھیلنے والے انگلش کپتان اس سال نے ساتھی کھلاڑیوں کی جانب سے لیگ کی تعریف پر پاکستان سپر لیگ میں دلچسپی لی اور پشاور زلمی نے ان کی خدمات حاصل کیں جہاں نئے کپتان ڈیرن سیمی کی زیر قیادت وہ اپنی ٹیم کیلئے ٹائٹل جیتنے کی کوشش کریں گے۔

سنیل نارائن

ویسٹ انڈین اسٹار دنیا کے بہترین آف اسپنر اور محدود اوورز کی کرکٹ خصوصاً ٹی20 کے اسپیشلسٹ تصور کیے جاتے ہیں۔ آف اسپنر غیرقانونی باؤلنگ ایکشن کے سبب گزشتہ ایڈیشن میں پاکستان سپر لیگ میں شرکت نہیں کر سکے تھے لیکن گزشتہ اپریل میں ان پر عائد پابندی اٹھا لی گئی تھی۔

آف اسپنر برینڈن میک کولم کی لاہور قلندرز کی ٹیم کا حصہ ہیں اور 2012 میں ویسٹ انڈیز کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی جتوانے میں اہم کردار ادا کرنے والے اسپنر سے لاہور قلندرز کو امید ہے کہ وہ باؤلنگ یونٹ کی قیادت کرتے ہوئے فتح گر کردار ادا کریں گے۔ ان کی افادیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ گزشتہ سال جب وہ انڈین پریمیئر لیگ ہندوستان کے دیس پہنچے تو اس سے قبل ٹی20 میں 650 اوورز میں 5.52 کی عمدہ اکانومی کے ساتھ 216 وکٹیں لے چکے تھے۔

سنیل نارائن
سنیل نارائن

جیسن رائے

جیسن رائے کا شمار موجودہ دور کے بہترین اور جارح مزاج اوپنرز میں ہوتا ہے۔ رواں سال ہندوستان کے خلاف سیریز میں تین نصف سنچریاں بنا کر عمدہ فارم کا ثبوت دینے والے رائے کو لاہور قلندرز نے زخمی ڈیوین براوو کی جگہ اسکواڈ میں شامل کیا ہے اور وہ برینڈن میک کولم کے ساتھ مل کر وہ بحیثیت اوپنر دنیا کے کسی بھی باؤلنگ اٹیک کی دھجیاں اڑا سکتے ہیں۔

جیسن رائے
جیسن رائے

مارلن سیمیولز

دنیا میں شاید ہی کوئی ایسا کھلاڑی ہو جس نے دو ورلڈ کپ فائنل میں مین آف دی میچ کا ایوارڈ حاصل کیا ہو لیکن ویسٹ انڈیز کے مارلن سیمیولز یہ اعزاز رکھتے ہیں۔ 2012 کے ورلڈ ٹی20 میں سری لنکا کے خلاف مشکل وقت میں عمدہ انگز تراشنے والے سیمیولز نے 2016 میں ایک مرتبہ پھر تاریخ کو دہراتے ہوئے انگلینڈ کے خلاف فائنل میں ناقابل شکست اننگز کھیلی اور اپنی ٹیم کو دوسری مرتبہ ورلڈ ٹی20 کا چیمپیئن بنوا دیا۔

مارلن سیمیولز
مارلن سیمیولز

گزشتہ سال پی ایس ایل نہ کھیلنے والے سیمیولز اس سال پشاور زلمی کے مضبوط اسکواڈ کے اہم رکن ہیں اور انہیں پشاور زلمی کو امید ہے کہ وہ فرنچائز کیلئے وہی کردار ادا کریں گے جو وہ ویسٹ انڈیز کیلئے کئی سالوں سے انجام دے رہے ہیں۔

مہیلا جے وردبے اور تلکارتنے دلشان

سری لنکا یہ دو عظیم سپوت دنیائے کرکت میں کسی تعارف کے محتاج نہیں۔ ٹی20، ون ڈے ہو یا ٹیسٹ انہوں نے تینوں طرز کی کرکٹ میں کامیابی کے جھنڈے گاڑے۔ دلشان کا دل اسکوپ شائقین کے دل بھا گیا تو جے وردنے کی ٹائمنگ کے سامنے دنیا کے بڑے سے بڑے باؤلرز بھی بے بس نظر آتے ہیں۔ اس سیزن میں دلشان پشاور زلمی اور جے وردنے کراچی کنگز کی نمائندگی کرتے ہوئے نظر آئیں گے۔

رلی روسو

جنوبی افریقہ کے رلی روسو کا شمار بھی نئے دور کے جارح مزاج بلے بازوں میں کیا جاتا ہے۔ حال ہی میں کولپاک ڈیل کے سبب جنوبی افریقہ سے کھیلنے کے حق سے محروم ہونے والے روسو دنیا بھر میں لیگ کرکٹ کھیلنے کا سلسلہ جاری رکھیں گے اور 2017 کی پاکستان سپر لیگ میں وہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی ٹیم کا حصہ ہیں جہاں وہ اپنی ٹیم کی جیت میں کردار ادا کرنے کیلئے پرعزم ہیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s